لدائی کہ عمل
  • تاریخ: 2012 مئی 14

مسلمانوں كے درميان منافقين كا وجود


           
مسلمانوں كے درميان منافقين كا وجود

پيغمبر اسلام (ص) كے دور ميں ايك سب سے بڑي مشكل مسلمانوں كے درميان منافقين كا وجود تھا يہ گروہ ظاھري طور پر مسلمان تھا مگر باطني طور پر اسلام پر كسي قسم كا اعتقاد نہ ركھتا تھا بلكہ موقع ملتے ھي اسلام كو نقصان پھونچاتا اور مسلمانوں كي گمراھي كا سبب بنتا۔
قرآن كريم نے اس سلسلے ميں سوروں ميں سخت ترين لھجہ ميں ان سے خطاب كيا ھے جيسے سورہ بقرہ، آل عمران، نساء، مائدہ، انفال، توبہ، عنكبوت، احزاب، فتح، حديد، حشر اور منافقون نيز مجموعي طور پر قرآن ميں سينتيس مقامات پر كلمۂ نفاق استعمال ھوا ھے۔
يہ افراد جن كي تعداد جنگ احد ميں تمام مسلمانوں كي ايك تھائي تھي "عبد اللہ بن ابى" كي سر كردگي ميں جنگ كرنے سے الگ ھوگئے اور مسلمانوں ميں تفرقہ كا باعث بنے كہ سورۂ منافقون انھيں لوگوں كے بارے ميں نازل ھوا ھے 83 اب آپ خود سوچيں كہ جب كہ نہ ابھي اسلام كے اس قدر طرفدار موجود ھيں اور نہ اس كے پاس كوئي خاص اقتدار ھے اور اعتقاد كو چھپانے كا بھي كوئي خاص مقصد دكھائي نھيں ديتا اس كے باوجود مسلمانوں كي كل آبادي ميں سے ايك تھائي تعداد منافقين كي تھي تو اب آپ اندازہ لگائيں كہ جب اسلام مكمل طور سے بر سر اقتدار آگيا اور سارے جزيرة العرب پر چھا گيا تھا تو ان كي تعداد كس قدر بڑھ چكي ھوگي۔
پيغمبر اسلام صلي اللہ عليہ وآلہ وسلم ھميشہ اس گروہ كي مخالفت سے دوچار رھتے تھے اور خاص طور پر حجة الوداع ميں يہ تمام افراد پيغمبر اسلام (ص) كے ساتھ تھے اور يہ بات واضح و روشن تھي كہ يہ لوگ كسي بھي صورت حضرت علي عليہ السلام كي خلافت كو قبول نہ كرينگے اور فتنہ و فساد پھيلائيں گے اور امنيت خطرہ ميں پڑ جائے گي اور اس طرح خود اسلام اور قرآن كو نقصان پھنچے گا لھٰذا ايسي صورت حال كے پيش نظر پيغمبر اسلام صلي اللہ عليہ وآلہ وسلم كا فكر مند ھونا خالي از امكان نہ تھا۔
پيغمبر اسلام (ص) كي زندگي كے آخري لمحات تك منافقين كے وجود سے انكار نھيں كيا جاسكتا يھاں تك كہ عمر آپ كي وفات كا انكار كرتے ھوئے يہ كہہ رھے تھے كہ كچھ منافقين يہ خيال كر رھے ھيں كہ پيغمبر اسلام (ص) وفات پاگئے ھيں 84 اور اسي طرح بعض تاريخي كتابيں اس بات كو بيان كرتي ھيں كہ اسامہ كے جوان ھونے پر اعتراض كر كے ان كي سرداري سے انكار كرنے والے افراد منافقين ھي تھے 85، يہ گروہ پيغمبر اسلام (ص) كي زندگي ميں آپ كا بدترين دشمن سمجھا جاتا تھا ليكن نھيں معلوم آخر كيا ھوا كہ پيغمبر اسلام صلي اللہ عليہ وآلہ وسلم كي وفات كے بعد خلفاء ثلاثہ كے لئے كسي قسم كي مشكل پيش نہ آئي اور يہ گروہ ايك دم سے غائب ھوگيا۔ كيا پيغمبر صلي اللہ عليہ وآلہ وسلم كي وفات كے بعد يہ سب كے سب ايك دم بالكل سچے مسلمان ھوگئے تھے يا كوئي مصلحت ھوگئي تھي يا پھر ايسے افراد بر سر اقتدار آگئے تھے كہ جو منافقين كے لئے كسي بھي طرح مضر نہ تھے؟!

 سقيفہ كے حقائق ( روایت ابومخنف كي روشني ميں)          تارى، جليل

Copyright © 2009 The AhlulBayt World Assembly . All right reserved